ٹیلر ہمفرے  بچوں کا نام تجویز کرنے کے وہ بطور فیس 1500 سے 10 ہزار ڈالرز تک وصول کرتی ہیں

257

چوں کی نگہداشت یا انہیں پڑھانے والے کے بارے میں تو آپ نے کافی کچھ سنا ہوگا لیکن بچوں کے نام رکھنے کے لیے پیشہ وارانہ خدمات حاصل کرنے کے بارے میں شاذ و نادر ہی سنا ہوگا۔ 

لیکن امریکا کے شہر نیویارک کی 33 سالہ ٹیلر اے ہمفرے بچوں کے نام رکھنے کے پیشے سے منسلک ہیں اور وہ لوگوں کو انکے بچے کا نام اس کی شخصیت، خاندان کے پس منظر اور دیگر عوامل کے مطابق نکال کر دینے کے لیے لوگوں سے بھاری رقوم بطور فیس وصول کرتی ہیں۔ 

ٹیلر ہمفرے کی گزر بسر اسی آمدنی سے ہوتی ہے وہ بطور فیس 1500 سے 10 ہزار ڈالرز تک وصول کرتی ہیں۔ 

ان کی خدمات کا آغاز ایک فون کال سے ہوتا ہے اور ایک فہرست دی جاتی ہے، جس میں روایتی نام ہوتے ہیں۔ ساتھ ہی ایک سوالنامہ ہوتا ہے جس کا جواب دینا ہوتا ہے۔

اس میں آپشن ہوتا ہے جن میں جینیاتی تحقیق، برانڈ اور  خاندانی کاروبار بشمول نام کا چناؤ شامل ہوتا ہے۔

خاندان کی جانب سے یہ سوالنامہ پُر ہونے کے بعد یہ خاتون اس کی مطابق بچے کا نام تجویز کرتیں اور اسی کی وہ فیس بھی وصول کرتی ہیں۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.