کے پی آئی ٹی بورڈ میں غیرقانونی بھرتیوں اور 36 کروڑ سے زائدکی بے ضابطگیوں کا انکشاف

169

آڈیٹر جنرل نے تحریک انصاف دور میں خیبر پختونخوا انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ میں بھرتی کیے گئے 19 افسران کی بھرتیاں غیر قانونی قرار دے دیں۔

آڈیٹر جنرل نے رپورٹ میں قرار دیا کہ بھرتی کیلئے شارٹ لسٹنگ اور سلیکشن کا عمل شفاف نہیں تھا۔

آڈیٹر جنرل نے ذمہ داروں کے تعین کیلئے اعلیٰ سطح کی تحقیقات کی سفارش کی ہے اور کہا ہے کہ ملازمین کی برطرفی اور ریکوری کی جائے۔

رپورٹ میں کہا گيا کہ تحریک انصاف کی موجودہ اور سابق حکومت نے افسروں کو بھرتی کیا، کے پی آئی ٹی بورڈ میں پرکشش تنخواہوں پر منیجنگ ڈائریکٹر اور ڈائریکٹرزبھرتی ہوئے۔

آڈیٹر جنرل کی رپورٹ کے مطابق بورڈ کے اکاؤنٹس میں 36 کروڑ 50 لاکھ روپے کی سنگین بے ضابطگیاں بھی سامنے آئی ہیں۔

 بورڈ کے ایم ڈی صاحبزادہ محمد علی نے کہاکہ آڈٹ رپورٹ ابتدائی اعتراضات پرمشتمل ہےاور کئی اعتراضات کا جواب دیا ہے، باقی اعتراضات بھی دور کریں گے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.