برطانیہ: معدوم ہوتی تتلیوں کی تعداد میں لاکھوں کا اضافہ ریکارڈ، مگر کیسے؟

248

ویسے تو دنیا بھر میں ہی تتلیاں معدومیت کا شکار ہیں تاہم برطانیہ سے ایک اچھی خبر سامنے آئی ہے جہاں تتلیوں کی تعداد میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

 برطانوی خبر رساں ادارے کی ایک رپورٹ کے مطابق بٹر فلائی کنزرویشن وائلڈ لائف چیریٹی کی جانب سے کی گئی تحقیق کے مطابق برطانیہ میں 2019 کے بعد سے تتلیوں کی تعداد میں اب تک کا سب سے بڑا اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

محققین  نے رواں سال 14 جولائی سے 6 اگست کے درمیان 1.5 ملین سے زیادہ تتلیاں اور دن میں اڑنے والے کیڑے ریکارڈ کیے ہیں، بتایا گیا ہے کہ برطانیہ میں ریڈ ایڈمرل نامی تتلیوں کی  تعداد 2 لاکھ 48 ہزار سے زائد ریکارڈ کی گئی ہے۔

تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ ایک طرف ریڈ ایڈمرل تتلی کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے تو دوسری جانب 13 سال پہلے تتلیوں کی  گنتی کا  جو عمل شروع کیا گیا تھا  اس سے  حاصل ہونے والے اعدادوشمار سے معلوم ہوا کہ تتلیوں کی بہت سے نسلوں میں کمی آئی ہے اور وہ معدومیات کی شکار ہوگئی ہیں۔

برٹش ڈاکٹر زو رینڈل نے بتایا کہ  تتلیاں صحت مند ماحول کیلئے ایک اچھا اشارہ ہیں، کیڑوں نے 2023 کے ملے جلے موسم سے فائدہ اٹھایا ہے۔

ان کا مزید کہنا ہے کہ برطانیہ کے گرم دنوں میں ہونے والی بارش سے کیٹرپلر  کی خوراک کا اچھا انتظام ہوا ہے، یہی وجہ ہے کہ رواں سال کی گرمی ریڈ ایڈمرل کی تعداد میں اضافے کیلئے مثبت ثابت ہوئی ہے اور  پچھلے سال کی گنتی میں 338 فیصد اضافہ ہوا۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.