ایف آئی اے سائبرکرائم کی عمران خان کے وکیل نعیم پنجھوتا سےکئی گھنٹے تک تفتیش

33

اسلام آباد: وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے) کے سائبر کرائم ونگ نے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کے  وکیل نعیم حیدر   پنجھوتا سے کئی گھنٹے تک تفتیش کی ہے۔

ذرائع ایف آئی اے کے مطابق نعیم حیدر  پنجھوتھا تفتیش کے لیے ایف آئی اے ہیڈ کوارٹرز گئے تھے، آج  ایف آئی اے نے انہیں عمران خان کے خلاف توشہ خانہ کیس کی سماعت کرنے والے جج ہمایوں دلاور کی سوشل میڈیا پوسٹ سے متعلق تحقیقات کے لیے بلایا تھا۔

نعیم حیدر پنجھوتھا تفتیش کے لیے ایف آئی اے سائبر کرائمز ونگ کے پاس گئے تھے جہاں 8 گھنٹے تک ان سے تفتیش کی گئی۔

عیم پنجوتھا نے جج ہمایوں دلاور سے منسوب جعلی سوشل میڈیا اسکرین شارٹس عدالت میں پیش کیے تھے، ایف آئی اے کی انکوائری میں اسکرین شاٹ جعلی ثابت ہوئے تھے۔

خیال رہےکہ وکیل نعیم حیدر پنجھوتا چیئرمین پی ٹی آئی کے قانونی امور پر ترجمان بھی ہیں۔

تحریک انصاف کے وکیل شیر افضل مروت نے تصدیق کی تھی کہ نعیم حیدر پنجوتھا کو ایف آئی اے نے گرفتار کرلیا ہے۔

وکیل شیر افضل مروت کے مطابق نعیم پنجھوتا کے کلرک نے ان کی حراست کا بتایا ہے، ان کا کہنا تھا کہ ابھی یہ واضح نہیں کہ نعیم پنجھوتا کو باضابطہ گرفتار کیا گیاہےکہ نہیں، ایسے اقدامات سے وکلاء برادری متحد ہوگی۔

8 گھٹنے تک ایف آئی اے آفس میں موجود رہنےکے بعد نعیم پنجوتھا ایف آئی اے دفتر سے روانہ ہوگئے۔

دوسری جانب ایف آئی اے نے عمران خان کے ایک اور  وکیل خواجہ حارث کو بھی طلب کرلیا۔

ایف آئی اے نوٹس میں کہا گیا ہےکہ  پیش نہ ہونے کی صورت میں سمجھا جائےگا کہ آپ کے پاس اپنے دفاع میں کہنےکو کچھ نہیں ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.